پرویز رشید، ویسٹ انڈیز اور مرزا اقبال بیگ

      Comments Off on پرویز رشید، ویسٹ انڈیز اور مرزا اقبال بیگ

تحریر: ملک ذیشان حسین
آج پرویز رشید کو وزارت سے ہٹایا گیا تو مجھے بچپن کے وہ دن یاد آگئے جب پاکستان کی کرکٹ ٹیم ویسٹ انڈیز کے دورے پر گئی تھی تو ریڈیو پاکستان نے اپنے کمنٹیٹرز بھیجنے کی بجائے ویسٹ انڈیز کے ایک مقامی ریڈیو کی لائیو کمنٹری نشر کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ خدا جھوٹ نہ بلاوائے اس زمانے کی اس جزائر غرب الہند کے لہجے والی انگلش کمنٹری کی ہمیں ذرا بھی سمجھ نہیں آتی تھی دوسری جانب کرکٹ کا جنون ہمیں اس باوجود ریڈیو سے چپکے رہنے پر مجبور کرتا تھا۔ اس کے دوران جب ریڈیو پر تماشائیوں کا شور سنائی دیتا اور رواں تبصرہ کرنے والے صاحب کی آواز میں جوش آ جاتا تو ہم سمجھ جاتے کہ کچھ نہ کچھ ہو گیا ہے لیکن کیا اور کتنا ہوا ہوتا یہ پتا ہرگز نہ چلتا۔ پھر تقریبا ایک منٹ کے بعد کمنٹری کی آواز پس منظر میں چلی جاتی اور کراچی سٹوڈیو سے مرزا اقبال بیگ اپنی دلکش آواز میں بزبان اردو بیان کرتے کہ فلاں کو فلاں نے آوٹ کر دیا یا فلاں نے چھکا لگا دیا تو پھر ہمیں اصل حالات معلوم پڑتے۔ لیکن کبھی کبھی وہ شور اور کمنٹیٹر کا جوش محض اپیل کی صورت میں بھی ہوتا تھا یعنی ہوتا کچھ بھی نہیں تھا۔ صاحبو آج پرویز رشید کے ساتھ کچھ ہونے کا شور بلند ہے رواں تبصرہ کرنے والے بھی پرجوش آواز میں بول رہے ہیں اور ہم آج بھی اسی بچپن کی طرح دم سادھے بیٹھے ہیں کہ کب وقت کا مرزا اقبال بیگ آ کے اصل بات بتائے کہ کیا اور کتنا ہوا ہے ؟